علی ایمبرائیڈری کا ہائی پرفارمنس ٹینس ٹریننگ کیمپ اختتام پذیر

0
42

لاہور: علی ایمبرائیڈری ہائی پرفارمنس ٹینس ٹریننگ کیمپ 2023 پیر کو نشتر پارک ٹینس کورٹ میں اختتام پذی ہوگیا۔

سیکرٹری کھیل شاہد زمان اور علی ایمبرائیڈری ملز کے سی ای او طارق زمان نے اختتامی تقریب میں بطور مہمان خصوصی شرکت کی۔ انہوں نے ٹینس کوچ عقیل خان، شہزاد خان، احمد بابر، عارف فیروز اور ٹرینر اظہر حسین کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے شرکاء میں شیلڈز اور انعامات تقسیم کیے۔ PLTA کے سیکرٹری رشید ملک نے سیکرٹری کھیل شاہد زمان کے ہمراہ طارق زمان کو ان کی حمایت کے اعتراف میں سووینئر پیش کیا۔

رشید ملک نے مسلسل دوسرے سال علی ایمبرائیڈری ملز ہائی پرفارمنس ٹینس کیمپ کی مسلسل اسپانسر شپ پر طارق زمان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ مسٹر زمان اگلے سال ہائی پرفارمنس کیمپ کا انعقاد کرکے ٹینس کے کھیل کی حمایت جاری رکھیں گے اور سال بھر قومی سینئر اور جونیئر ٹینس ایونٹس کی سرپرستی بھی کریں گے۔

ملک نے سیکرٹری کھیل شاہد زمان کو ان کی غیر متزلزل حمایت اور پاکستان لان ٹینس ایسوسی ایشن (PLTA) کو عالمی معیار کے ٹینس سینٹر میں کیمپ منعقد کرنے کی اجازت دینے پر ان کی تعریف کی۔ انہوں نے طویل اور زیادہ بار بار تربیتی کیمپوں کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے مشورہ دیا کہ انہیں سال میں کم از کم دو بار منعقد کیا جانا چاہیے۔ ملک نے قومی اور بین الاقوامی مقابلوں کے لیے مستقبل کے ٹینس چیمپئنز کی تیاری میں ان کیمپوں کے فوائد پر روشنی ڈالی، جس سے وہ پاکستان کو بین الاقوامی سطح پر شناخت دلانے کے قابل بنا۔

سیکرٹری اسپورٹس اینڈ یوتھ افیئرز شاہد زمان نے ہائی پرفارمنس ٹینس ٹریننگ کیمپ کو سپانسر کرنے پر طارق زمان کا شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ مزید کارپوریٹ کمپنیاں ٹینس کو سپورٹ کرنے کے لیے آگے بڑھیں گی، جس سے ملک کے باصلاحیت نوجوان کھلاڑی اپنے وطن کے لیے اپنے خوابوں کو پورا کر سکیں گے۔

زمان نے ہائی پرفارمنس ٹینس کیمپ کے آئندہ دوسرے مرحلے کا بھی اعلان کیا جو اسٹیٹ آف دی آرٹ نشتر پارک ٹینس کورٹس میں اسٹیٹ بینک کے ہیڈ کوچ راشد ملک کی رہنمائی میں منعقد کیا جائے گا۔ انہوں نے اس امید کا اظہار کیا کہ نہ صرف واپس آنے والے شرکاء بلکہ نئے مدعو کیے گئے نوجوان ٹینس کھلاڑی بھی اعلیٰ تعلیم یافتہ کوچز کی مہارت سے مستفید ہوں گے

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here