لاہور: چیئرمین پی سی بی احسان مانی نے جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ اور ٹی ٹونٹی انٹرنیشنل سیریز جیتنے پر قومی کرکٹ ٹیم کو مبارکباد پیش کی ہے۔پہلی اننگز میں 24 رنز کے عوض 4 وکٹیں گنوانے کے باوجود پاکستان نےکراچی ٹیسٹ میں 7 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔ راولپنڈی میں کھیلے گئے دوسرے ٹیسٹ میچ میں پاکستان نے دوسری اننگز میں آخری دس اوورز میں جنوبی افریقہ کی 7 وکٹیں محض 33 رنز پر گرا کر کامیابی حاصل کی تھی۔پاکستان کی یہ جنوبی افریقہ کے خلاف 18 سال بعد ٹیسٹ سیریز میں پہلی فتح تھی۔سیریز میں کلین سوئیپ کی بدولت پاکستان نے عالمی ٹیسٹ رینکنگ میں 2 درجے ترقی پائی تھی۔ٹی ٹونٹی سیریز میں وکٹ کیپر بیٹسمین محمد رضوان کی شاندار کارکردگی کی بدولت پاکستان نے جنوبی افریقہ کو 1-2 سے شکست دی ۔ سیریز میں کامیابی کی بدولت پاکستان نے عالمی ٹی ٹونٹی رینکنگ میں چوتھی پوزیشن برقرار رہتے ہوئے اپنے ریٹنگ پوائنٹس مزید بہتر کرلیے ہیں۔جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں کامیابی دراصل بابر اعظم کی ٹیسٹ کپتان کی حیثیت سے اپنے سفر کا کامیاب آغازبھی ہے۔ مصباح الحق کی بطور کپتان/ کوچ بھی یہ مسلسل بارہویں ہوم ٹیسٹ سیریز ہے، جہاں وہ ناقابل شکست رہے ہیں۔احسان مانی، چیئرمین پی سی بی:پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین احسان مانی کا کہنا ہے کہ وہ جنوبی افریقہ کے خلاف ٹیسٹ اور ٹی ٹونٹی سیریز جیتنے پر پاکستان کرکٹ ٹیم میں شامل تمام کھلاڑیوں اور اسپورٹ اسٹاف کو مبارکباد پیش کرتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نیوزی لینڈ کے خلاف سیریز میں شکست کے باوجود جس طرح پاکستان کرکٹ ٹیم نے کم بیک کرتے ہوئے جنوبی افریقہ کو ہوم سیریز میں شکست دی وہ یقیناََ ان کی صلاحیتوں کا منہ بولتا ثبوت ہے۔چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ قومی کرکٹ ٹیم کی اس کارکردگی نے مداحوں کو خوش کردیا ہے ، ایک برانڈکی حیثیت سےکرکٹ فینز پاکستان کرکٹ اور اس سے جڑے ستاروں سےملک کے اندر اور باہر ایسی ہی کارکردگی کی توقع رکھتے ہیں۔احسان مانی نے کہا کہ اس سیریز میں قومی کھلاڑیوں کی کارکردگی سے واضح ہوتا ہے کہ وہ نہ صرف عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں بلکہ ان کی کارکردگی میں تسلسل بھی واضح ہے، وہ پرامید ہیں کہ جنوبی افریقہ کے خلاف کامیابی سے پاکستان کرکٹ ٹیم کے اعتماد میں اضافہ ہوگا اور یہ کارکردگی مستقبل میں پاکستان کے لیے مزید فتوحات کی بنیاد بنے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ یہ کامیابی ٹیم ورک اور تمام کھلاڑیوں کی مشترکہ محنت کا ثمر ہے۔احسان مانی نے کہا کہ وہ اس سیریز میں محمد رضوان، حسن علی اور نعمان علی کی کارکردگی سے بہت خوش ہیں، جہاں محمد رضوان نے اپنی کارکردگی سے مداحوں کے دل جیتے ہیں تو وہیں حسن علی اور نعمان علی کی طویل طرز کی کرکٹ میں عمدہ کارکردگی سےواضح ہوتا ہےکہ پاکستان کا نیا ڈومیسٹک اسٹرکچر معیاری اور میرٹ کی ضمانت ہے۔چیئرمین پی سی بی احسان مانی نےکہا کہ اس نئے ڈومیسٹک اسٹرکچرکی بدولت آئندہ چند سالوں میں پاکستان کو مزید باصلاحیت کرکٹرز ملیں گے، وہ پاکستان کرکٹ بورڈ کی منیجمنٹ کی کاوشوں کو بھی سراہنا چاہتے ہیں کہ جن کی انتھک محنت کی بدولت ہم اس سیریز کو ایک محفوظ ماحول میں منعقد کروانے میں کامیاب ہوئے، اس دوران بہترین لاجسٹک، براڈکاسٹ اور میڈیا کوریج کا بھی اہتمام کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتظامات سیکورٹی ایجنسیز، وفاقی اور صوبائی حکومتوں کے تعاون کے بغیر ممکن نہ تھے۔ چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ وہ آخر میں پاکستان کا دورہ کرنے پر جنوبی افریقہ کے مشکور ہیں،امید ہے کہ وہ اپنے ساتھ خوشگوار یادیں واپس لے کرجارہے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here